Home / اردو شاعری / آئینہ اب جو دیکھنا مجھ میں غزل | زہرا قرار

آئینہ اب جو دیکھنا مجھ میں غزل | زہرا قرار

غزل

آئینہ اب جو دیکھنا مجھ میں
پاؤگے کچھ نہ کچھ نیا مجھ میں

رات بھر کیوں دیا جلاتا ہے
ایک مندر کا دیوتا مجھ میں

تو جو کہتا ہے یہ محبت ہے
اس کی موجودگی دکھا مجھ میں

راس آنے لگی ہے تنہائی
وہ ہے ہر وقت بولتا مجھ میں

ختم خود کو اگر میں کر بھی لوں
کیا بچے گا ترے سوا مجھ میں

تم جو کرتے ہو اتنی تعریفیں
اب ہے ایسا بھی کیا بھلا مجھ میں

بات بنتی ہوئی بگڑ جائے
کوئی ایسی کمی بتا مجھ میں

صبر کی داستاں پرانی ہے
اب نہیں اور حوصلہ مجھ میں

زہرا قرار

Check Also

غیر مسلم شعرا کرام دا نعتیہ کلام اور انہاں دے نام

غیر مسلم شعرا کرام دا نعتیہ کلام  نعت گوئی دا آغاز حضور اکرم صلی اللہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: معذرت سئیں نقل دی اجازت کائینی