Home / اردو شاعری / محمد ذیشان اقبال قیصرانی کے کچھ اشعار

محمد ذیشان اقبال قیصرانی کے کچھ اشعار

چند اشعار 

تھوڑا تھوڑا کر کے بیچنا پڑا مجھے
اے وقت معزرت میں تجھے بھی نہ بچا سکا
۔
میں سچ میں ایک چہرے سے بہت متاثر ہوں
مجھ پر بھی ایک پہلو کا لمس طاری ہے
۔
مجھے یاد ہے میری جان جب تو نے ایک شب کیا یوں ادب
بس ذیشان اب میری مان اب تو ہی کر بسر میری زندگی

لوٹے جو بلبل عزت کسی گُل کی
ہے فرض یہ مالی کا وہیں چیر کے رکھ دے

۔
میری رعایا پہ اس وقت ہی آ کے دشمنوں نے وار کیا
جب اپنے ہتھیار پگھلا کے گھنگرو بنا چکا تھا میں
۔
رات کے سفر سے آشنا ہوں میں
اک شہر تمنا کا حوصلہ ہوں میں
۔
باغباں کا جگھڑا جگنو سے ہوا ہے
باغ خالی سارے پرندوں سے ہوا ہے

شاعری : محمد ذیشان اقبال ذیشان

انتخاب : اسد بلوچ ایڈمن سرائیکی سبدھ

Check Also

غیر مسلم شعرا کرام دا نعتیہ کلام اور انہاں دے نام

غیر مسلم شعرا کرام دا نعتیہ کلام  نعت گوئی دا آغاز حضور اکرم صلی اللہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: معذرت سئیں نقل دی اجازت کائینی